42

گلگت بلتستاں: چیف کورٹ کا گریڈ 5 تک کے ملازمین کی تنخواہ سے کرونا فنڈ کٹوتی نہ کرنیکا حکم

گلگت (ویب ڈیسک) چیف کورٹ گلگت بلتستان کے چیف جج جسٹس ملک حق نواز اور جسٹس علی بیگ پر مشتمل بنچ نے حکومت کی جانب سے سرکاری ملازمین کی پانچ دنوں کی تنخواہ کی کرونا فنڈ کٹوتی سے متعلق قائد حزب اختلاف کیپٹن ر شفیع خان کی رٹ پٹشن پر فیصلہ جاری کردیا ہے۔

آئینی درخواست پر سماعت ہوئی تو چیف جج جسٹس ملک حق نواز نے اکائونٹنٹ جنرل آفس گلگت کو دائر شدہ پٹیش پر فیصلے سے آگاہ کیا اور حکم دیا کہ گریڈ ون سے گریڈ 5 تک کے کسی بھی سرکاری ملازم کی تنخواہ سے کوئی کرونا فنڈ کٹوتی نہ کی جائے۔

گریڈ 6 سے گریڈ 16 تک کے ملازمین کی صرف ایک دن کی تنخواہ کرونا فنڈ میں جمع کی جائے اور گریڈ 17 سے گریڈ 19 تک کے سرکاری ملازمین کی دو دنوں کی تنخواہ کاٹی جائے۔

عدالت عالیہ نے حکم دیا کہ گریڈ 20 سے اوپر کے وہ سرکاری ملازمین جوکہ گلگت بلتستان حکومت کے ماتحت خدمات سرانجام دے رہے ہیں، ان ملازمین کی تین دنوں کی تنخواہ کرونا فنڈز میں جمع کی جائے۔

یہ بھی پڑھیں: کرونا سے بچاؤ کے لیے عوام حکومتی تدابیرپرعمل کریں: گورنر گلگت بلتستان

عدالت میں دوران سماعت اپوزیشن لیڈر کیپٹن ریٹائرڈ شفیع خان موجود نہیں تھے۔ سماعت کے دوران عدالت کو استفسار پر امجد ایڈووکیٹ نے بتایا کہ پنجاب حکومت نے بھی گریڈ کی بنیاد پر کرونا فنڈز جمع کیا ہے جسکا نوٹیفیکیشن پٹیشن کیساتھ موجود ہے۔

سماعت مکمل ہونے پر چیف جسٹس ملک حق نواز نے اکائونٹنٹ جنرل آفس کے ڈپٹی اکائونٹنٹ جنرل ندیم کو حکم دیا کہ عدالتی فیصلے پر عملدرآمد کیا جائے اور کام کا آغاز کیا جائے۔ تحریری حکم ایک گھنٹہ میں جاری کردیا جائے گابعد میں عدالت سے تحریری فیصلہ جاری ہوتے ہی اکائونٹنٹ جنرل آفس پہنچادیا گیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں