54

مارچ سے قبل مزید ایک ہزار اساتذہ بھرتی کریں گے: وزیر تعلیم

گلگت (ویب ڈیسک) صوبائی وزیر تعلیم ابراہیم ثنائی نے کہا ہے کہ گلگت بلتستان میں مسلم لیگ ن کی حکومت نے تعلیمی نظام میں انقلابی تبدیلیاں لائی ہیں پہلی بار این ٹی ایس کے ذریعے اساتذہ کو میرٹ پر بھرتی کیا گیا ایجوکیشن میں جتنا کام ہمارے دور میں ہوا اسکی تاریخ میں مثال نہیں ملتی.

میڈیا سے گفتگوکرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ تعلیم سے ہمارا مستقبل وابستہ ہے اس لئے اس میں کسی قسم کی کمپرومائز کی گنجائش نہیں ہے ایجوکیشن کے بغیر کوئی بھی قوم ترقی نہیں کر سکتی کوالٹی ایجوکیشن کی فراہمی کو یقینی بنانے کے لئے ہم نے گلگت بلتستان کے تمام اضلاع میں ماڈل سکول کا قیام عمل میں لایا گیا جس میں اساتذہ کو محکمانہ ٹیسٹ انٹرویو کے ذریعے تعینات کیا گیا یہی وجہ ہے کہ والدین اپنے بچوں کو پرائیوٹ سکولوں سے نکال کر سرکاری سکولوں میں داخلہ کروا رہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ جدید طرز پر بچوں کو تعلیم دینے کے لئے ای لرننگ کی کلاسز شروع کر دی ہیں جو کامیاب رہا ایجوکیشن میں ہماری پالیسی واضح ہے ایجوکیشن نظام کو بہتر کرنا میرا مشن تھا جس پر اللہ کے کرم سے تقریباً کامیاب ہو گیا ہے انہوں نے کہا کہ سرکاری سکولوں میں اساتذہ کی کمی کو پورا کرنے کے لئے نئے تعلیمی سال سے پہلے ایک ہزار سے زائد نئے اساتذہ تعینات ہونگے پانچ سو ریگولر اساتذہ بھرتی کئے جا رہے ہیں.

اس کے علاوہ پانچ سے چھے سو اساتذہ کو سپیشل تنخواہ دے کر بھرتی کیا جا رہا ہے اس سلسلے میں تمام قانونی پیچیدگیوں کو دور کر دیا گیا ہے ہم نے سیب اساتذہ کو قانونی دائرے میں لا کر ریگولر کیا ابراہیم ثنائی نے مزید کہا کہ ہم زبانی دعوے نہیں بلکہ عملی کام کر کے دیکھاتے ہیں

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں