53

پولیس ملزمان کیساتھ سازباز کر چکی، انصاف فراہم کیا جائے: شہری کی آئی جی کو درخواست

لودھراں (ملک عبدالشکورحیدری) پولیس پر ملزمان سے مبینہ طور پر سازباز ہونے اور صلح نامہ پر دستخط کرنے کا الزام شہری کی آئی جی پولیس پنجاب کو تحریری درخواست۔

تفصیل کے مطابق تھانہ سٹی لودھراں کے علاقہ موضع کونڈی کے رہائشی زاہد حسین ولد بشیر احمد بلوچ نے آئی جی پولیس پنجاب کو دی گئی تحریری درخواست میں موقف اختیار کیا ہے کہ میں جانوروں کا بیوپاری ہو ں۔

یکم جنوری 2018 کو مویشی فروخت کرنے بہاولپور منڈی مویشیاں گیا ہوا تھا میرے بچے گھاس کاٹنے چلے گئے جب شام کو گھر واپس آ کر دیکھا دیکھا تو طلائی زیورات اور ایک لاکھ تیس ہزار روپے نقدی وغیرہ چوری کر لئے گئے۔

میں نے اپنے طور پر کھوج لگانے کے بعد 3 جنوری 2018 کو تھانہ سٹی لودھراں میں کارروائی کے لیے درخواست دی تو 25 جنوری 2018 کو تفتیشی نے صفائی پیش کرنے کے لیے ملزمان کے معززین کو نامزد کیا مگر انہوں نے صفائی نہ دی تو میں نے اس وقت کے ڈی ایس پی شاہ عالم کو دو فروری 2018 کو تحریری درخواست دی۔

جس کے بعد پولیس نے سفید کاغذ پر میرا انگوٹھا لگوا یا مگر بعد میں اس پر تحریر لکھی کہ میرا سامان مجھے مل گیا ہے جبکہ میرے پاس تمام ثبوت موجود ہیں مگر پولیس کی ملزمان سے مبینہ طور پر ساز باز ہو چکی ہے اور میری رقم اور سامان واپس نہ کرنا چاہتی ہے اور میرا مقدمہ بھی خارج کر دیا ہے۔

زاہدحسین نے مقدمہ بحال کرنے اور ملزمان سے مبینہ طور پر ساز ہونے والے پولیس افسران کے خلاف سخت کارروائی کا بھی مطالبہ کیا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں