26

گلگت بلتستان میں تین نئے اضلاع بنائےجائینگے: پارلیمانی سیکرٹری

گلگت (ویب ڈیسک) پارلیمانی سکریٹری برائے پانی وبجلی میجر(ر) محمد امین نے کہاہے کہ ضلعوں کی منڈی لگ گئی ہے تو بلتستان ڈویژن کو بھی برابر حقوق ملنے چاہیں ایسا نہ ہو نے کی صورت میں یہاں سے بڑی آوازیں اٹھنا شروع ہوں گی اور مسائل پیدا ہو ں گے.

بلتستان میں تین نئے اضلاع بنائے جائیں جب تین اضلاع بنیں گے تب تک انصاف کے تقاضے پورے نہیں ہوں گے کے پی این سے بات چیت کرتے ہوئے انہوں نے کہاکہ سکردو حلقہ نمبر2کی آبادی ڈیڑھ لاکھ سے تجاوز کر گئی ہے مشہ بروم ، چھوربٹ اور گلتری کے علاقے بھی اضلاع کے شرائط پراتر تے ہیں بلتستان کو نظر انداز کرنے کی پالیسی مناسب نہیں ہے ہم عوام کے ساتھ کھڑے ہوں گے.

گلگت اور دیامرمیں تین تین اضلاع بنا کر بلتستان ریجن میں صرف ایک ضلع بنانا ہر گز انصاف نہیں ہے اس طرح کے فیصلوں سے مسائل پیدا ہوں گے نئے اضلاع کے قیام کے مطالبے کی مکمل حمایت کرتے ہیں مشہ بروم اور چھوربٹ کو ملا کر ضلع سیاچن بنایا جاسکتا ہے.

گلتری بھی بارڈر ایریا ہے یہاں لوگ بے پناہ مسائل کا شکار رہتے ہیں ضلع بننے سے عوام کو ان کی دہلیز پر سہولیات اور مراعات ملیں گی بلتستان میں نئے اضلاع کاقیام ملک وقم کے وسیع تر مفاد میں ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں