290

ایس ایس جی کرکٹ لیگ 2018

از قلم : فیض رسول ہاشمی

کلب کرکٹ کھلاڑیوں کے لیے ریڑھ کی ہڈی کی مانند ہے جہاں سے کھیل کر ایک پلیئر اپنی کارکردگی کے بل بوتے پر انڈر16 ، انڈر19 ، سینئر انٹر ڈسٹرکٹ اور ریجن ٹیم سے ہوتا ہوا قومی ٹیم میں جگہ بنا سکتا ہے ماضی میں کئی بڑے اسٹارز کلب کرکٹ ہی کی وجہ سے آگے آئے اور انہوں نے دیارِ غیر میں سبز ہلالی پرچم لہرایا.

بہاولپور کے ٹھنڈے گرم موسم میں کرکٹ کا پھول کھل گیا پہلی ایس ایس جی کرکٹ لیگ کا اختتام جناج اسپورٹس کرکٹ کلب کی جیت پر ہوا اعصاب شکن مقابلہ میں سر صادق جم خانہ کی ٹیم کو 94 رنز سے شکست کا سامنا کرنا پڑا۔
بہاولپور کے ڈرنگ اسٹیڈیم میں دو ہفتوں تک جاری رہنے والی اپنی نوعیت کی پہلی کلب کرکٹ لیگ میں بہاولپور ڈسٹرکٹ کے ٹاپ بارہ کلبز نے شرکت کی۔ اس لیگ میں بہاولپور کے صفِ اول کے کھلاڑیوں نے ٹورنامنٹ میں چار چاند لگا دیے۔
پاکستان کی جانب سے 2 بین الاقوامی ون ڈے میچز کھیلنے والے کامران حسین ہوں یا کئی فرسٹ کلاس میچز کا تجربہ رکھنے والے عمران اللہ اسلم اس کے علاوہ لاہور قلندرز جونیئر 2017 ٹیم کے کھلاڑی شارون احمد بھی ٹورنامنٹ میں جلوہ گر ہوئے۔
تمام ٹیموں کو چار گروپس میں تقسیم کیا گیا

گروپ اے : جناح اسپورٹس کرکٹ کلب، ٹرسٹ کرکٹ کلب روہی کرکٹ کلب
گروپ بی : سر صادق جم خانہ ، ایگلٹس کرکٹ کلب اور سماء کرکٹ کلب
گروپ سی : سر صادق دوست کرکٹ کلب ، فالکن کرکٹ کلب اور سٹی جم خانہ کرکٹ کلب
گروپ ڈی : خواجہ فرید کرکٹ کلب، العباس کرکٹ کلب ، کمبائنڈ کرکٹ کلب کی ٹیمیں شامل تھیں۔

ہر گروپ کی ٹاپ ٹیم نے سیمی فائنل کے لیے کوالیفائی کیا
پہلے سیمی فائنل میں جناح اسپورٹس نے خواجہ فرید کرکٹ کلب کو زیر کیا اور دوسرا سیمی فائنل سنسنی خیز مقابلہ کے بعد سر صادق جم خانہ کے نام رہا
ایونٹ کے آخری ٹاکرے میں جناح اسپورٹس کرکٹ کلب نے ٹاس جیت کر اس موقع سے بھرپور فائدہ اٹھایا اور ایک وکٹ کے نقصان پر 236 رنز اسکور کیے بہاولپور ریجن ٹیم کے کپتان عمران اللہ اسلم نے ٹورنامنٹ کی برق رفتار سنچری صرف 44 گیندوں پر اسکور کر ڈالی انکی اننگز میں 9 فلک بوس چھکے بھی شامل تھے جناح اسپورٹس کلب کے قائد محمد وقاص نے بھی میدان کے چاروں طرف بہترین اسٹروکس کھیلے اور 58 بولز پر 100 رنز بنا کر ناقابل شکست رہے سر صادق جم خانہ کی جانب سے واحد وکٹ محمد عمران نے حاصل کی۔
237 رنز کے تعاقب میں سر صادق جم خانہ کی ٹیم ابتدا سے ہی مشکلات کا شکار رہی اور کوئی بھی کھلاڑی جم کر نہ کھیل سکا اور مطلوبہ 20 اوورز میں 142/9 رنز بنا سکی عبداللہ نے 38 رنز کی ناقابل شکست اننگ کھیلی
جناح اسپورٹس کی جانب سے محمد مستنصر نے چار کھلاڑیوں کو پویلین کی راہ دکھائی۔
شاندار سنچری پر عمران اللہ اسلم کو میچ کے بہترین کھلاڑی کا ایوارڈ دیا گیا۔
جناح اسپورٹس کرکٹ کلب کو ٹرافی کے ساتھ دس ہزار روپے اور سر صادق جم خانہ کی ٹیم کو ٹرافی اور چھ ہزار روپے کا انعام دیا گیا۔
سر صادق جم خانہ کے بلےباز محمد احمد 2 میچز میں 120 رنز بنا کر ٹاپ بلے باز ، فالکن کلب کے بولر علی رضا 3 میچز میں نو وکٹیں لے کر نمبر ون بولر اور سر صادق جم خانہ کے ہی حامد علی 8 وکٹوں اور 112 رنز بنا کر ٹورنامنٹ کے بہترین کھلاڑی کا ایوارڈ لے اڑے۔
اس موقع پر مہمان اعزاز فرسٹ کلاس امپائر اور شعبہ مطالعہ پاکستان اسلامیہ یونیورسٹی آف بہاولپور کے ہیڈ آف ڈیپارٹمنٹ آفتاب گیلانی نے تمام کھلاڑیوں میں انعامات تقسیم کیے۔
” انہوں نے گفتگو کرتے ہوئے بتلایا کہ کلب کرکٹ ہی کرکٹ کی نرسری ہے جہاں سے بڑے بڑے نام پاکستان ٹیم میں شامل ہوئے ہیں یہ کلب لیگ بہاولپور کے کھلاڑیوں کے لیے فائدہ مند ثابت ہوگی “۔
” ٹورنامنٹ کے سیکرٹری اور پاکستان کرکٹ بورڈ کے اسکورر حفیظ الرحمٰن نے بتلایا کہ اس طرح کی لیگ پہلی بار بہاولپور میں ہوئی ہے جس میں بہاولپور کے تمام ٹاپ کھلاڑیوں نے حصہ لیا اب یہ لیگ ہر سال منعقد ہوگی جس سے اس شہر میں کرکٹ کا بول بالا ہوگا ہمارا مقصد کرکٹ کو پروموٹ کرنا ہے “۔
فائنل میچ کو انجوائے کرنے کے لیے عوام کا بڑا اجتماع موجود تھا لیکن اس کے باوجود پی سی بی کا کوئی آفیشل یا کوچ موجود نہیں تھا جو کہ کھلاڑیوں کی پرفارمنس کو جانچتا کلب کرکٹ کو مکمل طور پر فعال بنائے بغیر کوالٹی کرکٹرز کا سامنے آنا ممکن نہیں ہے۔

یہ بھی پڑھیں: صحت اور نیوٹریشن کی سہولتیں خواجہ سراؤں کا بھی حق ہے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں